تعارف

اقبال اکادمی پاکستان حکومت پاکستان کے زیر انتظام آئینی ادارہ ہے۔ اس کا قیام اقبال اکادمی آر ڈی نینس ۱۹۶۲ء کے تحت بطور مرکز ِ فضیلت برائے اقبال شناسی عمل میں آیا۔ اس کے قیام کا بنیادی مقصد علامہ اقبال کے شعر و حکمت کا مطالعہ و تفہیم، اس کی تحقیق و تدوین، اس کا ابلاغ و تعارف اور تشر و اشاعت کا اہتمام ہے ۔
ان مقاصد کے حصول کے لیے اقبال اکادمی جو کام کرتی ہے وہ ذیل میں ہیں: مطبوعات، اطلاعیات کے منصوبے، روابط بڑھانے کا پروگرام، اقبال ایوارڈ لائحہ، ویب گاہیں، تحقیق و تدوین، صوت و صدا، ملٹی میڈیا، ذخیرہ کرنے کے منصوبہ جات، ان کے علاوہ نمائیشیں، کانفرنسیں، سیمی نار، بیرونِ ملک علامہ اقبال کا پیغام پھیلانا، تحقیق میں راہنمائی، علمی معاونت، مالی مدد اور کتب خانہ کی خدمات، وغیرہ

قوائد و ضوابط

اقبال اکادمی مالی قوائد

اقبال اکادمی مالی قوائد، ۲۰۱۷

اقبال اکادمی پاکستان خدمات قوائد

اقبال اکادمی پاکستان خدمات قوائد، ۲۰۱۷

اقبال اکادمی آرڈینینس

اقبال اکادمی آرڈینینس، ۱۹۶۲

اقبال اکادمی پاکستان کے طبعی قوانین

طبعی قوانین, 2017

اقبال اکادمی پاکستان کے الیکشن کے قوائد و ضوابط

قوائد و ضوابط برائے الحاق

اقبال اکادمی پاکستان کے قوائد و ضوابط برائے الحاق

شہریوں کو خدمات کی فراہمی کا دورانیہ

عوام کی شکایات کے لیے


نوٹیفیکیشن

اقبال اکادمی کے دفتری نوٹیفیکیشن/حکمنامے

ملازمتیں


پیشکش


کتب خانہ

اقبال اکادمی کا کتب خانہ

مزید پڑھیں

سالانہ رپورٹ ۲۰۱۶-۱۷

(حکومتِ پاکستان، قومی تاریخ و ادبی ورثہ ڈویژن)

مطبوعات

اقبال اکادمی پاکستان کی کتب کی فہرست

مجلسِ عاملہ

اکادمی کے روزمرہ معاملات کے انتظامات کے لیے ایک مجلسِ عاملہ ہے۔ مجلسِ عاملہ درج ذیل افراد پر مشتمل ہوتی ہے ۔


مزید پڑھیں

ہئیتِ حاکمہ

آرڈینینس کی دفعہ ۱۷ کے تحت اکادمی کی انتظامیہ اور کنٹرول ہئیتِ حاکمہ کے پاس ہے جو کہ درج ذیل پر مشتمل ہے۔

قومی صدارتی اقبال ایوارڈ